نسل کی پہچان ہو ہی جاتی ہے

لاہور (ویب ڈیسک ) (ن) لیگی ایم این اے ملک محمد افضل کھوکھر نےکھوکھر پیلس گرانےکے لئے آنے والے سرکاری ملازمین کو کھانا پیش کر کے ایک مثال قائم کر دی ایک طرف کھوکھر پیلس کے ملحقہ ان کی فیملی کے گھروں اور ان کی مارکیٹوں کو گرا کر حکومت اس پر قبضہ کر رہی تھی

تو دوسری طرف ملک افضل کھوکھر کی طرف سے ایل ڈی اے کے ملازمین اور پولیس اہلکاروں کو کھانا پیش کیا جا رہا تھا اس حوالے سے ملک محمد افضل کھوکھر کا کہنا تھا ملازمین کا کیا قصور وہ تو سرکار کے حکم کے پابند ہیں جبکہ مہمان نوازی کرنا ہمارے خون میں شامل ہے۔یہاں آپ کو بتاتے چلیں کہ جوہر ٹائون لاہور میں کھوکھر برادران سے 125کروڑ کی اراضی واگزار کرا لی گئی۔ا ایکشن شروع کرنے سے پہلے کھوکھر پیلس کو جانے والے تمام راستوں کو کنٹینر لگا کر مکمل طور پر بند کر دیا گیا تھا،میڈیا سمیت کسی کو وہاں جانے کی اجازت نہیں دی گئی پھر بھی تمام تر رکاوٹیں عبور کرتے ہوئے ن لیگی کارکنوں کی بڑی تعداد کھوکھر پیلس پہنچنے میں کامیاب ہو گئی مگر ایم این اے ملک محمد افضل کھوکھر کی ہدایت پر کسی نے کوئی مداخلت نہ کی۔ سیف الملوک کھوکھر کا کہنا ہے کہ ایک ایک مرلہ ہماری ملکیت ہے۔ ملک محمد افضل کھوکھر نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان حکومت سر توڑ کوشش کے باوجود کھوکھر پیلس کو غیر قانونی ثابت نہ کر سکی تو میرے رشتہ داروں کے گھر اور مارکیٹیں غیر قانونی قرار دیکر گرا دیں۔ حکومت انتقام میں اس حد تک جائے گی سوچا بھی نہ تھا۔ حکومت جو مرضی کر لےنواز شریف کا ساتھ نہیں چھوڑیں گے۔